رمضان اور خریداری


رمضان شروع ہونے سے کچھ دن پہلے ہمارے ہاں بازاروں میں رش بڑھ جاتا ہے۔ بازاروں اور سپر اسٹورز میں خریدار ی اتنی زیادہ بڑھ جاتی ہے کہ چلنے پھرنے تک کی جگہ نہیں ہوتی۔ ہر شخص اپنی ضرورت سے کہیں زیادہ خریداری کرتا نظر آتا ہے۔ کچھ لوگوں کا تو یہی خیال ہوتا ہے کہ بس ابھی جو خریدنا ہے خرید لیں اور پورا رمضان کوئی خریدار ی نہ کریں۔ حالانکہ ایسا بھی نہیں ہوتا۔ کچھ لوگ اس خوف سے خریداری میں لگ جاتے ہیں کہ رمضان میں اشیاء کی قیمتیں بہت بڑھ جائیں گی سو سب کچھ پہلے سے خرید کر رکھ لیں۔

بہر کیف اس کثرتِ خریداری کی وجہ کچھ بھی ہو اس سے ہوتا یہ ہے کہ بازار میں اشیاء خورد و نوش کی طلب ایک دم سے بڑ ھ جاتی ہے۔ اشیاء کی طلب بڑھنے سے طلب اور رسد کا توازن بگڑ جاتا ہے اور نتیجتاً قیمتیں آسمان پر پہنچ جاتی ہیں۔ اس طرح افرات کے ساتھ خریداری کرنے والے مہنگائی میں اضافے کا بلواسطہ سبب بن جاتے ہیں اورغریب لوگ جو تھوڑی بہت خریداری کی ہی سکت رکھتے ہیں اُس سے بھی ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔

یہ جانتے ہوئے بھی کہ رمضان ایسا مہینہ ہے کہ جس میں ہم غریب مسکین لوگوں کی تکالیف کا احساس کرنا سیکھ سکتے ہیں جانے انجانے میں ہم خود ہی اُن کی تکلیف میں اضافے کا سبب بن جاتے ہیں۔ سو یہ بات اہم ہے کہ ہم خریداری میں اعتدال سے کام لیں اور بے جا اشیاء خرید کر بازار میں قیمتوں کا توازن خراب ہونے سے بچائیں۔

آپ کی ذرا سی توجہ ماحول میں بہتری کا سبب بن سکتی ہے۔ 

7 تبصرہ جات : اپنی رائے کا اظہار کریں:

Bushra کہا...

Ji mohtram

Aap ne bahot sahi farmaya ke Ramzan men badh chadh ker kharidari karne se un garibon ke dilon ko yaqinan taklif ka ehsas hota hoga ke hame bhi Allah mal dar banaya hota to aaj hum bhi apne aur apne biwi bachon ke Rozah o Iftar ke liye khane piney ka wafir saman kharid te. Unke dilon ko yaqinan bahot thees pahonchti hogi.

Hona to ye chahye ke Ramzan ki aamad se qabl masajid se kharidari o Shopping ke maozu per logon ko tawajjoh aur ehsas dilane keliye khas ker jume ke khutbon men bayanat hone chahye. Aur posters o hand bills ke zariye masajid men bhi taqseem kiya jana chahye. Kuch to log amal karenge. Bahot sare log gharibon ki madad karte bhi honge. Magar yahi cheez ejtemai shakal men ki jaye to acha ho. Har mohalle men kuch budhe o nao jawano ko leker kaam kiya ja sakta hai ke ghar ghar ja ker ahle khana se baat karen aur unhe in baton ke liye ehsas o tawajjo dilayn.

Allah aap ko jazaye khyr se nawaze ke aap ne mazmun likh ker awam ki tawajjo aur unki rahnumai ki ek Bahot Umdah aur Achi baat ki taraf.

Bushra khan
Allahabad

Bushra کہا...

Aap se ye puchna hy mere comments ke niche do words likhe hyn.

Reply - Delete

Iski mansha kya hai.?

Bushra khan
Allahabad

Muhammad Ahmed کہا...

بہت شکریہ بہن !

آپ کی گذارشات اہم ہیں۔ اللہ رب العزت ہمیں توفیق عطا فرمائے کہ ہم بساط بھر کوشش کریں اور اس معاملے میں اپنا فرض ادا کریں۔ آمین۔

Muhammad Ahmed کہا...

ایک بات تو یہ کہ آپ کی اردو اچھی ہے سو کوشش کرکے اردو رسم الخط میں ہی لکھیے۔

دوسری بات یہ کہ Delete اور Reply آپشنز تبصرے کے نیچے اس لئے موجود ہوتے ہیں کہ آپ اپنا تبصرہ حذف کر سکے اور کسی اور کے تبصرے کا جواب دے سکیں۔

افتخار اجمل بھوپال صاحب قابلِ قدر ہیں کہ اردو کی ترویج کا کام کر رہے ہیں۔ اگر آپ کو اردو لکھنے میں دقت کا سامنا ہے تو اردو محفل www.urduweb.org/mehfil میں شمولیت اختیار کرلیں۔

نیرنگِ خیال Rz Nain کہا...

اچھے موضوع پر قلم کشائی کی ہے آپ نے احمد بھائی

Muhammad Ahmed کہا...

شکریہ ذوالقرنین بھائی!

خوش رہیے۔

bushra khan کہا...

Sorry..!

Upar bheja gaya mazmun Apne aap Garbled ho gaya hai. Yani tarteeb ulat gai hai. Usey Ignore kijye ga. Dobara phir se bhej rahi hun.... Down Below



Ji

Mohtarmi

Salame masnoon

Shukriya aap ki rahnumai ka

Just abhi Apka jawab dekhi hun. Asal me meri urdu typing ka masla pechida noiyat ka hai.

Maslan urdu men QARBUZA/H likhna ho.

Ye samaj na aygi ke QAR خ se hai ya ق se aur BUZA men ز hai ya ذ. Aur last men choti ہ hai ya badi ح hai ya Alif ا.

Isi tarah jyse MOQTASAR likhna ho to kafi der sochna hota hai ke MOQ men ق hai ya خ aur TASAR men س hai ya ص.

Jab kuch palle na padega to Urdu to Eng Dictionary se madad lene men EK DOHRI MUSIBAT YE HOGI ke س aya د se pahle hai ل se pahle ya bad men. Aur ن aya ک ke bad hai ع ke bad. Matlab kon sa huruf kiske pahle hy kiske bad ata hai ye fauri taor per dimag men nahi ayga Dictionary dekhte waqt.

Ab jyse ص ek lafz hai uske liye sabse pahle mai ا ب پ ت Read karungi jab tak ص na ajayga. Tab hi muje malum hoga ke د aur س ke bad ke pages mujhe ulatna palatna hai tab hi ص ki shakal dikhai degi.

Aur ye har har alfaz ke liye dhundna hota hai. Isse acha khasa exertion ho jata hai ya you samajyeS Exercise ho jati hai.

Bar bar ye sab karte rahne se tabiyat Rigid ho jati hy.

Urdu ke bar khelaf English men fingers apne aap chalne lagti hyn.

Yahi nahi balke jyse agar, "NA MALUM" likhna ho. Ye samajh na ayga ke youn likhun "نہ مالوم" ya youn "نا معلوم" likhun.

Aur jyse "CHALIYE, AAIYE, JAAIYE, KHAIYE" likhna ho tow چل یے، جای یے، aur KHAIYE ka KHA istareh likha jayga ya istareh کھا/کحا

"BILKUL" jyse milake likhne wale alfaz mujh se nahi ban padte. Mai likhungi بل کل

Ab Aap ki samaj men aya hoga Bahot Typical Case hai mera.

Ye kon sudhaar sakta hai.? Aur in khamiyon ki Problem kyse Solve ho.?

جواب کی منطزر رہونگی.

Wassalam

Bushra khan

ایک تبصرہ شائع کریں

اردو میں تبصرہ پوسٹ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کر دیں۔


FB Like Test

رعنائیِ خیال پر تبصرہ کیجے ۔ بذریعہ فیس بک