جب نمازِ محبت ادا کیجیے

غزل

جب نمازِ محبت ادا کیجیے
غیر کو بھی شریکِ دعا کیجیے

آنکھ والے نگاہیں چُراتے نہیں
آئینہ کیوں نہ ہو سامنا کیجیے

آپ کا گھر سدا جگمگاتا رہے
راہ میں بھی دیا رکھ دیا کیجیے

آنکھ میں اشکِ غم آ بھی جائیں تو کیا
چند قطرے تو ہیں پی لیا کیجے

شانتی صباؔ

4 تبصرہ جات : اپنی رائے کا اظہار کریں:

کوثر بیگ کہا...

بہت عمدہ

محمد احمد کہا...

بہت شکریہ کوثر بیگ صاحب۔

Dayar-e-Urdu کہا...

Very nice effort we will be delighted to have u on our urdu community
Dayar-e-Urdu
Non-profitable Community forum to solely promote Urdu on Internet
www.dayareurdu.com

محمد احمد کہا...

@دیارِ اردو

محترم تبصرے کا بہت شکریہ۔۔۔۔!

انشاءاللہ فرصت رہی تو دیارِ اردو کی میمبرشپ اختیار کروں گا۔ ابھی سرسری دیکھا ہے۔ دیارِ اردو میں فی الحال ضرورت سے زیادہ انگریزی شامل ہے ۔ اسے بہتر بنایا جا سکتا ہے۔

رعنائیِ خیال پر تبصرہ کیجے ۔ بذریعہ فیس بک